If I Must Die...

If I must die

by Refaat Alareer (1979 - 2023)

If I must die,

you must live

to tell my story

to sell my things

to buy a piece of cloth

and some strings,

(make it white with a long tail)

so that a child, somewhere in Gaza

while looking heaven in the eye

awaiting his dad who left in a blaze–

and bid no one farewell

not even to his flesh

not even to himself–

sees the kite, my kite you made, flying up above

and thinks for a moment an angel is there

bringing back love

If I must die

let it bring hope

let it be a tale

Award-winning actor Brian Cox recites Refaat Alareer's 'If I Must Die'

اگر طے ہو چکا، میرا قتل کر دیا جانا

Translated to Urdu by @SalmanHydr

اگر طے ہو چکا، میرا قتل کر دیا جانا

تو تم زندہ رہنا

میری کہانی سنانے کے لیے

اور خریدنے کے لیے

میرے سامان کے عوض

کپڑے کا ایک ٹکڑا

جو سفید ہو اور دور تک لہراتا ہو

اور کچھ ڈور

تاکہ غزہ میں

آسمان کی طرف دیکھنے والا ایک بچہ

دیکھ سکے، اوپر بہت دور، ایک پتنگ کو

اس وقت جب وہ اپنے باپ کا انتظار کر رہا ہو اور جانے والا

ایک شعلے میں لپٹ کر جا چکا ہو

پلٹنے کا کوئی وعدہ کیے بغیر

اپنے بدن کے ٹکڑے

اپنے پیچھے چھوڑ کر

اور میری پتنگ، جسے تم نے بنایا تھا

ایک لمحے کو بدل جائے

اس بچے کے لیے

ایک ایسے فرشتے میں

جو آسمان سے محبت لیے اتر رہا ہے

اگر لکھا جا چکا

میرا مار دیا جانا

تو مجھے ڈھل جانے دینا ایک امید میں

اور ایک کہانی میں۔۔۔


Select poem translation

A poem by Refaat Alareer.